زندگى اور موت صرف الله پاک دینے والا ہے۔

یہ واقع کچھ اسطرح پیش ایا۔ جب محمد عظیم کو بریڈفورڈ کے ایک رائل انفرمری ہسپتال تک پہنچایا گیا تو اس وقت ان کی طبیعت بہت خراب ہو گئی تھی۔ اور ان کے جسم میں آکسیجن کی مقدار خون میں بىت کم ہو گئ تھی ان کى جان خطرے ممیں تھى، اتنی کم کے ان کی دیکھ بھال کرنے والے طبی عملے کا کہنا تھا آکسیجن کہ مقدار اس حد تک کم ہو چکى تھى کہ ان کا زندہ ہونا ایک معجزہ لگ رہا تھا۔

محمد عظیم پیشے کے لہاذ سے ٹىکسى ڈرائیور ہیں۔اور ان کہ عمر 35 سال ہے ۔ محمد اعظم کو ورزش اور تن سازی کے بہت شوکین تھے اور انکو اس بات کا زرا اندازہ نہیں تھا کہ وہ کرونا وائرس کا شکار ہو سکتے ہیں ۔

جب ان کو سانس لینے میں تکلیف اور دشواری محسوس ہوئی تو پہلے تو وہ بہت ڈر رہے تھے پھر برطانیہ کے ادارہ برائے صحت این ایچ ایس سے رابطہ کیا ۔

انکے اسپتال جانے سے ڈرنے کی وجہ تھی وہ افواہیں تھى جو برطانیہ میں رہنے والے ایشیائی برادری میں پھیلی تھیں لوگوں نے یہ افواہیں پھیلا رکھى تھى کہ اگر وہ ہسپتال گئے تو زندہ واپس نہیں لوٹ پائیں گے۔ لیکن محمد عظیم کے ایک دوست حلیم نے انکو زور دیا کہ وہ ایمبولنس کو بلا کر اور ان کو ہسپتال لے جانے میں انکى مدد کی کیونکہ اس وقت تک تو عظیم کی طبیعت بہت زیادہ بگڑ چکى تھى۔

جب محمد عظیم کو ہسپتال میں پہنچایا گیا تو یہ ہی تھا کہ ان کے انکا بچ نا نہ ممکن ہے۔ ڈاکٹروں کا کہنا تھا ایک جوان شحص ہماری آنکھوں کے سامنے مرنے والے تھا۔ ہم اسے کو جلدى سے ایمرجینسی وارڈ میں لے گئے اور وہ وہاں اگلے 48 دنوں تک کوما میں تھے اور پھر اہستہ آہستہ انکى طبعت بہتر ہوتى گئ اور وہ ہسپتال 68 دن تک رہے اور اج وہ مکمل طور پر صحت ىاب ہو گئے ہیں

Life and death is only giving By Allah. It was something like this. When Muhammad Great was delivered to a BadiFord Affairs Hospital, Bradford was very badly. And the amount of oxygen in their body was less than blood, he said that the risk of his sole staff, such a low-care medical staff said that the amount of quantity was less than that the al-‘although it was a miracle. Mohammad is a Talker Driver from the great profession. And that age is 35 years old. Mohammad Prime was very exciting and exercising, and he did not guess that he could suffer from Kiruna viruses. When they had trouble and troubled breathing, they were very afraid then they were very afraid then contacted the UK’s Health NHS. The danger of being afraid of going to his hospital was the rumors that spread in the Asian community living in the UK, people spread this rumors that if they went to the hospital, they will not return to the living. But a friend of Muhammad Ghaz emphasized him that he called for Ambulance and helped him to take the hospital because he was very bad for the greatness of the greatness. When Muhammad Great was delivered to the hospital, it was that his era is not possible. The doctors said a young man was going to die in front of our eyes. We took it to the Emergency Ward, and he was there in the comma for the next 48 days and then the gentleman was better and the correct position, and the hospital was staying for 68 days and he has become completely healthy

Share
COVID-19 CASES